SHC halt decission Sindh Government about IG A.D Khuwaja

4 years ago
666 Views

کراچی : سائیں سرکار کو ایک اور بڑا دھچکہ لگا گیا، سندھ ہائی کورٹ نے آئی جی سندھ کو عہدے سے ہٹانے سے روک دیا ، سات شہریوں نے اے ڈی خواجہ کو عہدے پر بحال کرنے کی درخواست دائر کی تھی جس پر عدالت نے فریقین سے بارہ جنوری تک جواب مانگ لیا۔ جبری رخصت پر حکم امتناع جاری کردیا گیا ہے۔

سندھ ہائی کورٹ میں آئی جی سندھ اے ڈی خواجہ کو ہٹانے پر شہری میدان میں آگئے اور آئی جی سندھ کو برقرار رکھنے اور زیادتی پر سندھ ہائی کورٹ میں درخواستیں دائر کردیں، درخواستوں کو قابل سماعت گرانتے ہوئے عدالت نے اس پر سماعت کا آغاز کیا، فریقین کے دلائل سننے کے بعد عدالت نے حکم دیتے ہوئے کہا ہے کہ آئی جی سندھ کو عہدے سے نہ ہٹایا جائے۔

عدالتی حکم نامے کے بعد سائیں سرکار کو بڑا دھچکہلگ گیا، عدالت نے اے ڈی خواجہ کی جبری رخصت پر حکم امتناع جاری کردیا،عدالت میں درخواست گزار کا کہنا تھا کہ اے ڈی خواجہ کو عہدے پر بحال کیا جائے، عدالت نے بارہ جنوری تک فریقین سے جواب طلب کرلیا۔ ذرائع کے مطابق اے ڈی خواجہ کو ہٹانے کی وجہ امن وامان کی خرابی نہیں بلکہ بڑے صاحب کے دوستوں کی مخالفت تھی، جس پر آئی جی سندھ کی اچانک چھٹی کردی گئی۔

 

اس سے قبل آصف زرداری کے دوستوں کی مخالفت، راؤ انوار کو ایس ایس پی ملیر نہ لگوانے پر، کلفٹن میں گھر سے اسلحہ برآمد کرنے پر، پھر بدین میں زرداری صاحب کے خاص آدمی کی شوگرمل کو گنے کی سپلائی رکوانے پر، کاشتکاروں نے شکایت کی تو پولیس سے کرائی حاجت روائی پر، یہ ہی وہ عوامل تھے جن پر اللہ ڈنو خواجہ سے عہدہ چھین لیا گیا تھا اور وہ ان کے گناہ بن گئے تھے، تاہم ھر اچانک عدالت آڑے آگئی اور شہریوں کی درخواست پر

Source : Samaa Tv

Comments